democracy
آؤ پنگا لیں

جمہوریت کا مطلب آخر ہے کیا؟

بدر سعید

ہم پاکستانی منشور کی بنیاد پر الیکشن نہیں لڑتے لیکن دعویٰ جمہوریت کا کرتے ہیں ۔ مہذب دنیا میں جمہوریت کا مطلب نہ تو الیکٹ ایبلز کی حکومت ہے اور نہ ہی کسی وڈیرے کی ۔ ہماری بدقسمتی یہ ہے کہ سیاسی جماعتیں ووٹرز کی باتوں کو کاپی پیسٹ کر کے نیا منشور بنا لیتی ہیں ۔

اگر ہم ملک کی ترقی اور جمہوری روایات کو فروغ دینا چاہتے ہیں تو پھر ہمیں پارٹی منشور کی بنیاد پر ووٹ دینا چاہیے وہ بھی اس صورت کہ پارٹی نظام کی طرز پر ووٹنگ ہو ، ہر پارٹی اپنا ایک لیڈر منتخب کرے جو یا تو وزیر اعظم بنے یا پھر اپوزیشن لیڈر ۔ ہر پارٹی کے اس متوقع وزیر اعظم کا مدمقابل سے مختلف فورمز ، چینلز پر مکالمہ ہو ، کھل کر مخالف پر تنقید کریں اور اپنی پالیسی کے حق میں دلائل دیں ، شہریوں کو بتائیں کہ کیسے کونسا شعبہ بہتر کریں گے ۔

اس بنیاد پر ووٹ لیں اور ووٹوں کی تعداد کے حساب سے انہیں پارلیمنٹ میں سیٹیں دی جائیں جس پر وہ ہر محکمہ سے متعلق ماہر کو وزیر نامزد یا منتخب کریں ۔ یہ طے کیا جائے کہ پارلیمنٹ کا کام صرف قانون سازی ہے اور کسی قسم کے ترقیاتی کاموں یا فنڈز سے کوئی تعلق نہیں ۔ پارٹی اگلے الیکشن میں جواب دہ ہو کہ اس نے کیا قانون سازی کی اور کیا بہتری آئی ، اگر وہ ناکام ہو تو لوگ دوسری پارٹی کو ووٹ دیں گے ۔

بھانت بھانت کے امیدواروں کے عجیب و غریب دلائل کی بجائے وزیراعظم کے لیے نامزد امیدوار ہی جواب دیں اور اگر وہ ناکام ہو تو پارٹی حکومت کے بعد عہدوں پر آنے والے خود ہی اس سے جواب طلبی کریں گے ۔ سر ! یہ وہ جمہوریت ہے جو فی الوقت ہمارے جمہوری ملک میں نہیں ہے۔ ہماری پارلیمنٹ قانون سازی کم اور ترقیاتی کاموں پر زیادہ زور دیتی ہے ۔ اس لئے بہتر یہ ہے کہ فی الوقت پارٹی کی بجا ئے شخصیت کو ووٹ دیجئے ۔

میری پسندیدہ پارٹی نے اگر ٹکٹ کسی کرپٹ یا بدمعاش کو دی ہے تو میرا فرض ہے اسے ووٹ دینے کے بجائے یہ دیکھوں کہ ان میں سب سے بہتر امیدوار کون ہے ، میں اپنے حلقے سے ایماندار یا بہتر امیدوار کو اسمبلی تک لے جانے کا ذمہ دار ہوں ۔ ہر حلقہ سے اچھے لوگ آئیں گے تو ان کا تعلق جس مرضی پارٹی سے ہو ، کم از کم بہتر کام ہی کریں گے ۔ جو کرپٹ ہے وہ ہر جگہ کرپٹ ہی ہے اور جو ایماندار ہے وہ پارلیمنٹ میں بھی ضمیر کے ساتھ ہی بیٹھے گا ۔

جمہوریت کا مطلب آخر ہے کیا؟
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top